90

بالاچ اور شعیب بلوچ کےماورائے عدالت و قانون قتل، لاپتہ افراد کی عدم بازیابی اور دیگر مطالبات کے حق گیارہواں روز بھی دھرنا جاری ہے

تربت(گدروشیاپوائنٹ)بالاچ مولابخش اور شعیب حمید کےماورائے عدالت و قانون قتل، لاپتہ افراد کی عدم بازیابی اور دیگر مطالبات کے حق میں تربت چوک پر آج 3 دسمبر کو گیارہواں روز بھی دھرنا جاری ہے۔ احتجاجی دھرنا میں بلوچ یکجہتی کمیٹی، حق دو تحریک، بلوچ ویمن فورم، وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کے رہنماؤں، سماجی کارکنان اور لاپتہ افراد کے لواحقین موجود ہیں۔ دھرنا کمیٹی کی جانب سے احتجاجی تحریک کو وسعت دینے کیلئے جلد تربت ٹو کوئٹہ لانگ مارچ کرکے کوئٹہ جانے کا اعلان کیا گیا۔ بلوچ یکجہتی کمیٹی کیچ کے رہنماؤں نے پریس کانفرنس کے دوران کہاکہ اس پورے تحریک کے لیے افرادی ہمراداری کے ساتھ ہمیں رسورسز کے لیے بھی آپ سب کا تعاون درکار ہے۔ اس وقت دنیا بھر میں موجود بلوچوں سے درخواست کرتے ہے کہ دھرنے کے آرگنائزرز سے رابطہ کرکے جس قسم کی مدد ہوسکے یقین دہانی کرائے، دوران مارچ، راہ سے گزرتے تمام علاقوں میں پہلے سے موبلائزیشن کی جائے اور زہنی حوالے سے تیاری کی جائے کہ وہ تحریک کا حصہ بنے۔ انہوں نے کہا کہ اس دوران ہم آپ سے درخواست کرتے ہیں کہ اپنے جبری گمشدہ پیاروں کے رجسٹریشن کروائیں، اور اس وسیع تحریک کو کیچ سے کوئٹہ تک پہنچانے کی تیاریاں کی جائے تاکہ تحریک حکمرانوں کے گھر پہنچ کر اپنے نسل کشی کا حساب مانگے۔ انہوں نے کہا کہ جیسا کہ ہم اوپر اپنا آئندہ لائحہ عمل بتا چکے ہیں، اور چند دنوں میں یہ تحریک مارچ کی کی شکل بلوچستان کے مختلف شہروں سے گزرتے ہوئے کوئٹہ تک جائے گی، ہم جلد یہاں سے نکلنے کی تاریخ اور ریسٹنگ اسٹیشنز کا اعلان کرینگے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں